سابق وزیر تعلیم پنجاب اور سابق رکن قومی اسمبلی ریاض فتیانہ نے عوام لیگ کے نام سے اپنی جماعت بنا لی، امریکہ میں تنظیم سازی

 

تیس اکتوبر کو لاہور میں ایک ہزار مندوبین کے ساتھ پارٹی لانچ کریں گے، دو ہزار اٹھارہ کے الیکشن تک عوام لیگ کو بڑی پارٹی بنا لیں گے، ریاض فتیانہ کی نیویارک میں پریس کانفرنس

نیویارک (محسن ظہیر سے ) سابق مسلم لیگی رہنما، سابق وزیر تعلیم پنجاب اور سابق رکن قومی اسمبلی ریاض فتیانہ اپنی نئی سیاسی جماعت عوام لیگ کی امریکہ میں تنظیم سازی کے سلسلے میں امریکہ پہنچ گئے ہیں ۔ اس دورے کے دوران وہ پانچ مختلف امریکی شہروں کا دور ہ کررہے ہیں جہاں کمیونٹی ارکان سے ملاقاتیں کرکے انہیں اپنی جماعت کے اغراض و مقاصد سے آگاہ کرنے کے ساتھ ساتھ انہیں جماعت میں شامل ہونے کی دعوت دے رہے ہیں ۔


نیویارک میں کمیونٹی کے ایک اجتماع اور میڈیا سے بات کرتے ہوئے ریاض فتیانہ کا کہنا تھا کہ عوام لیگ کو 30اکتوبر کو لاہور میں ایک ہزار نظریاتی مندوبین کی موجودگی میں لانچ کیا جائیگا ۔ ہر مندوب ایک سو کارکن تیار کرے گا۔ 2017 میں ایک لاکھ ورکرز کے ساتھ میدان میں کھڑے ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ شاید لوگ ابھی ہماری اس سیاست کو مذاق سمجھیں گےلیکن انشاءاللہ 2018کے الیکشن تک عوام لیگ ایک کروڑ ورکرز کی پارٹی بن جائے گی۔


ریاض فتیانہ نے کہا کہ عوام لیگ ایک پروگریسو اور ڈیموکریٹک پارٹی ہو گی۔ لیڈرشپ ذہین فطین ہو گی۔پارٹی میں وراثتی سیاست کی کوئی گنجائش نہیں ہونی چاہئیے اور ہماری پارٹی میں ایسا بالکل نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سیاست میں مٹھی بھر ارب پتی افراد پارٹیوں پر قابض ہیں ۔ وہ پارٹیوں کو اپنے ذاتی بزنس کی طرح چلاتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاسی جماعتوں میں کوئی جمہوریت نہیں، پارٹیوں کو کچن کیبنٹ چلاتی ہیں۔ہم وراثتی سیاست کا خاتمے کرکے سیاسی جماعتوں میں بھی جمہوریت لانا ہے۔


ریاض فتیانہ نے کہا کہ پاکستان میں مدرسوں ک وسائل یا بے وسائل خاندانوں کے بچے جو کہ پسماندہ علاقوں میں رہتے ہیں ، کی مجبوریوں سے فائدہ اٹھا کر اور انہیں روٹی ، کپڑا اور مکان کی بنیادی ضروریات کے نام برین واش کر دیا جاتا ہے اور جب وہ نام نہاد مدرسوں سے فارغ ہو کر نکلتے ہیں تو وہ نہ مسلمان رہتے ہیں اور نہ ہی انسان ۔ انہیں صرف ایک مخصوص مکتبہ فکر کی تربیت دی جاتی ہے اور وہ ہر انسان کو اپنے مکتبہ فکر کی عینک سے دیکھتے ہیں ۔تعلیم کے بنیادی نظام سمیت مدرسوں کے نظام کی اوورہالنگ کی جائے گی ۔سب مدرسوں کو قومیا ئے جانا چاہتے ہیں۔ انسانیت صبر تحمل اور انسانیت سے محبت سکھائی جائے ۔


عوام لیگ کے بانی نے کہا کہ ہم رواداری اور سماجی انصاف والا پاکستان چاہتے ہیں۔ ہم برادری میں تقسیم ہو گئے ہیں۔ ہم صرف اعلی برادریوں کے کام آتے ہیں باقیوں کو اچھوت سمجھتے ہیں۔ پاکستان میں اپوزیشن کے ارکان اسمبلی کو کوئی ترقیاتی فنڈز نہیں دئیے جاتے ، ان کے حلقوں میں بسنے والے عوام محض ترقیاتی کاموں سے اس لئے محروم ہو جاتے ہیں کیونکہ ان کے نمائندے حکومت کے حامی نہیں ہوتے ۔ اس سلسلے میں امتیازی سلوک کی انتہا ہے۔ ہم اس نظام کو بدل کر رکھ دیں گے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان میں ہائی کورٹی میں ججوں کی تقرری کو بھی بذریعہ امتحان اور میرٹ یقینی بنائیں گے حتیٰ کہ وکلاءکو بھی امتحان کے ذریعے جج بننا ہوگا۔


ریاض فتیانہ نے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہزاروں جانوں کی قربانی دی ، اربوں ڈالرز قومی معیشت کو نقصان پہنچا لیکن ہماری خارجہ پالیسی کی وجہ سے ، پاکستان وہ نتائج حاصل نہیں کر سکا کہ جو اس کا حق بنتا ہے ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان میں وی آئی پی کلچر ختم کرنا چاہتے ہیں۔ پاکستان میں معاشرے میں اچھے برے ظالم اور کمزور کا فرق ختم ہو گیا ہے۔ صرف پیسے والے کی حکمرانی ہے۔ بے حسی اور مایوسی کا عنصر پھیل رہا ہے۔ عوام اچھے آدمی کو ووٹ نہیں دیتے، پیسے والے کو ناخدا بنا لیا ہے۔ ہم معاشرے اور اس کی اعلیٰ اقدار کی بحالی چاہتے ہیں۔

 

ایک اور سوال کے جواب میں ریاض فتیانہ نے کہا کہ عمران خان کے ساتھ ایک سال رہنے کے بعد میں نے محسوس کیا کہ وہاں اچھے ایجنڈے پر عمل کرنا ممکن نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر محض مشہور شخصیت اور پیسے کی بنیاد پر سیاسی جماعتوں کو قائم کرنا ممکن ہوتا تو جنرل پرویز مشرف اور چوہدری شجاعت حسین جیسے لوگ ناکام نہیں ہوتے ۔عوام کو ایسی جماعت چاہئیے کہ جو ان سے ہو اور جو کو وہ چلائیں ۔

 


 

ریاض فتیانہ نے کہا کہ ملکی نظام کی گاڑی پٹری سے اتر گئی ہے اور اینٹوں پر کھڑی ہے۔ اس گاڑی کو بحال کرنا ہے اور ٹریک پر چلانا ہے۔اس سلسلے میں عوام کا کردار سب سے اہم ہوگا اور اس کردار کی ادائیگی میں عوام لیگ اہم کردار ادا کرے گی۔
انہو ںے کہا کہ ہم اوورسیز پاکستانیوں کو پارلیمنٹ میں نمائندگی دیں گے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان میں نواز حکومت کی تبدیلی نظر نہیں آرہی ۔ ایک آدھ دھرنوں سے حکومتیں تبدیل نہیں ہوا کرتیں ۔


پریس کانفرنس میں ریاض فتیانہ نے اعلان کیا کہ عوام لیگ کے امریکہ میں سرفراز شکیل، سعد محی الدین، سید رفاقت علی شاہ، سہیل اورمحمد فیصل کوارڈی نیٹر ہونگے ،

تاریخ اشاعت : 2016-09-12 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں

SiteLock