پی آئی اے کی پروازیں بحال کریں، پاکستانی سفارتخانہ میتوں کو پاکستان بھجوانے کا خرچ برداشت کرے

 

نیویارک (خصوصی رپورٹ) آل پاکستانی امریکن کونسل کے زیر اہتمام نیویارک (امریکہ ) سے قومی ائیر لائینز پی آئی اے کی پروازوں کی بندش اور اس بندش کے نتیجے میں امریکہ میں وفات پانے والے اوورسیز پاکستانیوں کی میتوں کی پاکستان روانگی کے حوالے سے پیدا ہونے والے مسلہ پر کمیونٹی کا خصوصی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں پاکستانی امریکن کمیونٹی کی مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی مقامی شخصیات اور ارکان شریک ہوئے ۔

 

اجلاس میں اعلان کیا گیا کہ اس مسلہ پر کمیونٹی کی جانب سے موثر اور فعال انداز میں آواز بلند کرنے کے لئے آل پاکستانی امریکن کونسل کے نام سے خصوصی تنظیم قائم کی گئی ہے جو کہ ختم نبوت کانفرنس سمیت دیگر اہم امور پر بھی اپنا کردار ادا کرے گی ۔

 

اجلاس میں طاہر میاں ، سلیم احمد ملک،فیاض خان ،شیخ توقیر الحق ،میاں شبیر گل ، خالد اعوان، ندیم اسحاق میاں، ڈاکٹر شفیق خٹک، علی رشید، عبدالباسط،سیمی اسد، ظہیر احمد مہر،المدار شاہ، علی رشید ،سلمان بٹ، خالد ملک، فائق صدیقی، وسیم سید، نواب دین، طاہرہ دین،شاہد کامریڈ، سہیل شیخ، قسیم واسطی ، مشیر عالم ، ضیاء،عالیہ صدیقہ اور ڈاکٹر شاہد ، ظفر چیمہ سمیت دیگر نے شرکت کی ۔سلیم احمد ملک نے نظامت کے فرائض انجام دئیے ۔
اجلاس میں امریکہ سے قومی ائیر لائینز کی بندش کے حکومتی فیصلے کو حکومتی نااہلی قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی گئی ۔

اجلاس میں طویل بحث و مباحثہ کے بعد ایک قرار داد متفقہ طور پر منظور کی گئی جس میں مطالبہ کیا گیا کہ پی آئی اے کی پروازوں کا جلد از جلد امریکہ سیکٹر کے لئے بحال کیا جائے اور جب تک پروازوں کی بحالی کا سلسلہ شروع نہیں ہو جاتا ، اس وقت تک امریکہ میں وفات پانے والے اوورسیز پاکستانیوں کی میتوں کو پاکستان بھجوانے کے اخراجات واشنگٹن ڈی سی میں موجود پاکستانی سفارتخانہ اور نیویارک ، شکاگو ، کیلی فورنیا میں موجود پاکستانی قونصلیٹ میں موجود کمیونٹی ویلفیئر فنڈز کے ذریعے ادا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت اور سفارتخانوں کی جانب سے کمیونٹی کے اس جائز مطالبے کو پورا نہ کیا گیا تو اے پی اے سی کی جانب سے اعلان کیا جاتا ہے کہ ہم ہر فورم پر احتجاج کریں گے اور اس سلسلے کو اس وقت تک جاری رکھیں گے کہ جب تک اس مسلہ کا حل نہیں نکال لیا جاتا۔
اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کمیونٹی قائدین نے کہا کہکچھ سال قبل امریکہ سے میت کو پاکستان بھجوانا بڑا مسلہ تھا جس کا اب دوبارہ سامنا ہے۔ اوورسیز کمیونٹی ملک کو بڑا ریونیو بھجواتی ہے۔ایمبیسی اور قونصلیٹ کے پاس کمیونٹی ویلفئیر فنڈ ہے، اس فنڈ کو میتوں کے بھجوانے کے مسلہ پر خرچ کیا جائے۔ہم سمجھتے ہیں کہ اس سے زیادہ اس فنڈز کا کوئی مستحق نہیں ہو سکتا ۔لہٰذا حق بنتا ہے کہ مستحق کیسوں میں فنڈز کمیونٹی پر خرچ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی سفیر اور قونصل جنرل اچھے بندے ہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ بعض معاملات ان کے اختیارات سے بالا تر ہیں ۔ لہٰذا ہم مطالبہ کرتے ہین کہ پارلیمنٹ اور کابینہ فیصلہ کرکے ان کو اختیار دے۔ہم اپنی قراردادکے ذریعے ان سے ں مطالبہ کرتے ہیں کہ یہ فنڈز خرچ کرنے کا سفارتخانوں کواختیار دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں ہر مستحق بھائی کےلئے کھڑے ہونا ہے۔قرارداد پر سب نے دستخط کئے ہیں اور ہم انہیں حکام بالا تک بھجوائیں گے ۔
کمیونٹی قائدین نے کہا کہ پی آئی اے کی پروازوں کی بحالی اور میتوں کی فری روانگی کے مسلہ پر کوئی سیاست نہیں کرنی چاہئیے۔ ہم سب کو موت کا ذائقہ چکھنا ہے۔
ہمیں بروقت ایکشن لینا چاہئیے تھا ۔

 

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کمیونٹی قائدین نے مزید کہا کہ بہت سی باتیں ہو رہی ہیں۔ پی آئی اے میں سفارشی بھرتی کئے گئے۔ من پسند افسر تعینات کرواکر ان سے اپنا فائدہ اٹھایا گیا۔انہوں نے کہا کہ اب بھی وقت ہے۔ شکاگو میں فلائٹ بند ہونے کے بعد شروع ہوئی ، امید ہے کہ ہم یہ کام نیویارک سے دوبارہ کرواسکیں گے ۔انہوں نے کہا کہ کمیونٹی کو یکجا کرنے کی باتوں کو عملی شکل دینا ہو گی۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کمیونٹی قائدین نے کہا کہ کاش ہم چند ماہ پہلے متحرک ہو جاتے تو بہتر پوزیشن میں ہوتے۔ کچھ لوگ افورڈ کر سکتے ہیں کہ باڈی لے جائیں ، ہماری کوشش ان لوگوں کےلئے ہے کہ جو افورڈ نہیں کر سکتے میت بھجوانے کا خرچ۔ہمیں کمیونٹی کا وفد لیکر قونصلیٹ کے پاس جانا چاہئیے۔ہم اپنے مسلہ میں الجھے ہوئے ہیں۔ہمیں اپنے روئیوں پر غور کرنا چاہئیے۔ پی آئی اے امریکہ میں وطن کا احساس اور نشانی تھی۔

ون نیشن کے میاں ندیم اسحاق نے کہا کہ ون نیشن بخوبی فیونرل کا کام انجام دے رہی ہے۔ ہم نے ساٹھ سے زائد فیونرل کئے،ہمارے سو سے زائد ممبرز ہیں۔ہمارا فیونرل ہوم سو فیصد بغیر نفع کے خدمت خلق کے جذبے سے کام کرتی ہے ۔ ہم سب تنظیم میں رضا کارانہ طور پر کام کرتے ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ

پی آئی اے کی پروازوںکی بندش کے بعد ہمیں ایک میت کو پاکستان بھجوانے کا موقع ملا ، اس سلسلے میں ہم سے امارات ائیر لائینز نے 14ڈالرز فی پاو¿نڈ وزن کے حساب سے چارج کیا ۔
آخر میں تمام شرکاءنے قرار داد پر دستخط کئے اور آل پاکستانی امریکن کونسل کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلایا ۔

 

 



 

 

تاریخ اشاعت : 2017-11-08 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock