تعلیم کے فروغ سے امریکہ، پاکستان اور دنیا کا مستقبل روشن بنانا ہے ؛ کانگریس مین سٹیو اسرائیل

 پاکستانی امریکن کمیونٹی کی ایک نمائندہ تنظیم پاکستانی امریکن کمیونٹی آف لانگ آئی لینڈ (پاکولی) کا کانگریس مین سٹیو اسرائیل کے اعزازمیں استقبالیہ

 پاکستان کی امداد کا بل جب پیش ہوا تو ایوان میں 90ارکان ایسے تھے کہ جنہوں نے امداد میں کٹوتی نہیں بلکہ اس کی مکمل بندش کے حق میں ووٹ دئیے لیکن میںنے اس امداد کے بل کو منظور کیا
پاکستان اور امریکہ کو پیچھے نہیں ہٹنا بلکہ آگے بڑھنا ہے ، نیویارک میں موجود پاکستانی امریکن کمیونٹی کے لئے میرا نیویارک اور واشنگٹن ڈی سی کے آفس ہر ممکن مدد اور تعاون فراہم کریں گے
 پاک امریکہ تعلقات بحال ہو چکے ہیں، ہمیں بہت سے شعبوں میں بالخصوص پاکستان میں تعلیم، توانائی، روز گار اور تجارت کے شعبوں میں امریکہ کے تعاون کی ضرورت ہے؛ قونصل جنرل
پاکولی کانگریس مین سٹیو اسرائیل کو کمیونٹی کا ایک دوست کانگریس مین سمجھتی ہے اور انہیں اپنے مکمل اور ہر ممکن تعاون کا یقین دلاتی ہے ؛ ذاکر صدیقی، ملک ندیم عابد، بشیر قمر، بانوقاضی اور جمال محسن کے خطابات
استقبالیہ میں ذاکر صدیقی،جمال محسن ، بشیرقمر، ملک ندیم عابداور راو¿ عبدالرحمان ، لیاقت سندھو، وسیم سید، طارق قریشی ،سلمان ظفر، سلمان شیخ، سعید حسن ، سید اون نقوی ، شہزاد وحید، ایاز خا ن، بانو قاضی ، سمیرا قریشی سمیت تنظیم کے ارکان او اہم شخصیات نے خصوصی شرکت کی



نیویارک(محسن ظہیر سے ) نیویارک سے ڈیموکریٹک پارٹی کے سینئر کانگریس مین سٹیو اسرائیل نے کہا ہے کہ تعلیم کے گروغ اور حصول تعلیم کے یکساں مواقع پیداکرکے امریکہ، پاکستان اور دنیا کے مستقبل کو روشن بناناہے اور یہ وہ کام ہے کہ جس کے لئے سب کو ملکر مشترکہ کردار ادا کرنا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے لانگ آئی لینڈ (نیویارک) میں پاکستانی امریکن کمیونٹی کی ایک نمائندہ تنظیم پاکستانی امریکن کمیونٹی آف لانگ آئی لینڈ(پاکولی)کی جانب سے اپنے اعزاز میں دئیے گئے استقبالیہ سے خطاب کے دورا ن کیا ۔ یہ استقبالیہ نیویارک کی پاکستانی امریکن کمیونٹی اور کانگریس مین اسرائیل کے درمیان ہونے والی پہلی ملاقات تھی جسے دونوں نے ایک دوسرے کے لئے متاثر کن قرار دیا۔
پاکولی کے صدر ذاکر صدیقی کی صدارت میں منعقدہ اس تقریب میں قونصل جنرل نیویارک فقیر سید آصف حسین کے علاوہ پاکولی کے عہدیداران، نائب صدر جمال محسن ، سیکرٹری جنرل بشیرقمر، چئیرمین پولیٹیکل ایکشن کمیٹی ملک ندیم عابداور راو¿ عبدالرحمان ، لیاقت سندھو، وسیم سید، طارق قریشی ،سلمان ظفر، سلمان شیخ، سعید حسن ، سید اون نقوی ، شہزاد وحید، ایاز خا ن، صدر شعبہ خواتین پاکولی بانو قاضی ، جنرل سیکرٹری سمیرا قریشی سمیت تنظیم کے ارکان اورمختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی کمیونٹی کی اہم شخصیات اور نیوجرسی سٹیٹ سے ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار برائے گورنر ولیم اروجا نے خصوصی شرکت کی ۔
کانگریس مین اسرائیل نے کہا کہ ان کا ماننا ہے کہ انسان سکول کے بچوں سے سب سے زیادہ سیکھتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ جب بھی امریکہ کے نظام تعلیم کے بارے میں کچھ جاننا چاہتے ہیں ، و ہ سکول کا دورہ کرتے ہیں اور سٹوڈنٹس سے ملکر سیکھنے کی کوشش کرتے ہیںاور پھر بہتری کے لئے اپنا کردار اداکرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں چند سال قبل آنیوالے زلزلے کے دوران مانسہرہ میں ایک سکول مکمل تباہ ہو گیا جسے امریکی امداد کے تحت از سر نو تعمیر کیا گیا ۔سکول دوبارہ کھلنے پر مانسہرہ کے بچوں کے چہرے پر خوشی قابل دید تھی اور میرے لئے سب سے باعث فخر بات سکول کے باہر لگا وہ بورڈ تھا کہ جس پر لکھا تھا کہ اس سکول کو امریکہ کی مدد سے از سر نو تعمیر کیا گیا۔میں سمجھتا ہوں کہ وہ سکول ایک نشانی ہے ۔ وہاں جب بھی سکول اور تعلیم کی بات آئے گی ، لوگوں کے ذہن میں سب سے پہلے جس قوم اور ملک کا خیال آئیگا ، وہ امریکہ ہوگا۔
کانگریس مین اسرائیل نے مزید کہا کہ امریکی ایوان نمائندگان میں پاکستان کی امداد کا بل جب پیش ہوا تو ایوان میں 90ارکان ایسے تھے کہ جنہوں نے امداد میں کٹوتی نہیں بلکہ اس کی مکمل بندش کے حق میں ووٹ دئیے لیکن وہ ان ارکان میں شامل تھے جنہوںنے اس امداد کے بل کو منظور کیا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کو پیچھے نہیں بلکہ آگے بڑھنا ہے


کانگریس مین اسرائیل نے نینشنل کونسل آف انٹیلی جنس کی جاریکردہ حالیہ رپورٹ جس میں کہا گیا کہ دنیا 2030میں کیسی ہو گی ،کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر ہم نے دنیا کو پر امن اور خوشحال بنانا ہے اور ایک دوسرے کے ساتھ افہام و تفہم اور ملکر رہنا ہے تو ہمیں تعلیم کو فروغ ہی نہیں دینا ہوگا بلکہ نیویارک ہی نہیں بلکہ پاکستان سمیت دنیا میں پرورش پانے والے بچوں کے لئے مواقع بھی پیدا کرنے ہیں ۔کانگریس مین اسرائیل نے مختلف سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر ، ڈرون حملے اور پاک امریکہ تعلقات میں درپیش معاملات کا جائزہ لیتے وقت ہمیں ہر وقت بہتری کے راستے تلاش کرنے چاہئیے ۔ اس سوال کہ امریکہ میں جامع امیگریشن اصلاحات کے کس حد تک امکانات ہیں ، کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایسی اصلاحات میں ٹی پارٹی سمیت ان جیسی سوچ رکھنے والے عناصر بڑی رکاوٹ ہیں تاہم میرا آفس اس امر کو یقینی بناتا ہے کہ امیگریشن بیوروکریسی کی ریڈ ٹیپ کے عمل کو کاٹ کر لوگوں کے مسائل کے حل کو یقینی بنایا جائے
قونصل جنرل فقیر سید آصف حسین نے کہاکہ خوش آئند امر ہے کہ پاک امریکہ تعلقات بحال ہو چکے ہیں ۔ ہر شعبے میں تعاون ایک بار پھر شروع ہو گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں بہت سے شعبوں میں بالخصوص پاکستان میں تعلیم، توانائی، روز گار اور تجارت کے شعبوں میں امریکہ کے تعاون کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان چاہتا ہے کہ آئندہ سال جب امریکی فوجیں افغانستان سے واپس جائیں تو ان کی واپسی اور ان کی واپسی کے بعد افغانستان پرامن اور خوشحال ہو۔اس سلسلے میں پاکستان اپنا ہر ممکن کردار ادا کرے گا
استقبالیہ سے خطاب کے دوران پاکولی کے صد ر ذاکر صدیقی ، بشیر قمر ،ملک ندیم عابد ، بانو قاضی اور سمیرا قریشی نے پاکولی اور پاکستانی امریکن کمیونٹی کی جانب سے کانگریس مین سٹیو اسرائیل کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ ان سے پہلی ملاقات نہایت متاثر کن رہی اور جس کھلے دل سے اور واضح الفا ظ سے کانگریس مین نے کمیونٹی کو اپنے ہر ممکن تعاون کو یقین دلایا ، وہ قابل ستائش ہے ۔انہوں نے کہا کہ آنیوالے دنوں میں پاکولی اس امر کو یقینی بنائے گی کہ نیویارک کی پاکستانی امریکن کمیونٹی کانگریس مین اسرائیل کے لئے اپنا ہر ممکن کردار ادا کرے ۔


 

استقبالیہ کے پہلے حصے میں نظامت کے فرائض بشیر قمر جبکہ دوسرے حصے میں ملک ندیم عابد نے ادا کئے ۔بشیر قمر نے کانگریس مین کو پاکولی کے اغراض و مقاصد کے بارے میں بتایا جبکہ ملک ندیم عابد نے تقریب کے آغاز میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں امریکہ اور پاکستان کے جاں بحق ہونے والے جوانوں اورافراد کی یاد میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کروائی اور ان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔
پاکولی کے صدر ذاکر صدیقی نے کہا کہ پاکولی ، کمیونٹی کی ایک اہم و نمائندہ تنظیم ہے جس کا مقصد نہ صرف کمیونٹی کو ایک پلیٹ فارم پر متحد و یکجا کرنا ہے بلکہ اس امر کو یقینی بنانا ہے کہ وہ کمیونٹی سرگرمیوں کے ساتھ ساتھ ، امریکی نظام کے قومی دھارے میں شامل ہو کر اپنا بھرپور کردار ادا کرے
آخر میں نائب صدر پاکولی جمال محسن کی جانب سے کانگریس مین سٹیو اسرائیل اور نیوجرسی کے امیدوار برائے گورنر ولیم آروجا اور شرکاءکا شکرئیہ ادا کیا گیا۔


تاریخ اشاعت : 2013-01-09 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock